Home / Education / ہزاروں لڑکیاں پرائمری کے بعد حصول تعلیم سے محروم ۔ رپورٹ دیکھیں۔

ہزاروں لڑکیاں پرائمری کے بعد حصول تعلیم سے محروم ۔ رپورٹ دیکھیں۔

وطن عزیز کی مجموعی آبادی 20کروڑ سے زیادہ ہے جس میں خواتین کی تعداد تقریباً49فی صد ہے ۔ ضلع چارسدہ کی مجموعی آبادی 16لاکھ سے زائد ہے جس میں خواتین کی تعداد سات لاکھ سے زائد ہے۔تعلیم کسی بھی قوم کی ترقی میں بنیادی کردار ادا کرتی ہے مگر بد قسمتی سے ملک کے دیگر پسماندہ علاقوں کی طرح ضلع چارسدہ کے بعض علاقوں میں بھی خواتین بنیادی تعلیم سے محروم ہے۔
ایسے ہی ایک علاقہ کا حال ہم آپ کو اس رپورٹ میں دیکھاتے ہیں جس کی آبادی 40ہزار سے زائد ہے لیکن یہاں پر لڑکیوں کا کوئی مڈل اور ہائی سکول موجود نہیں جس کی وجہ سے یہاں کی لڑکیاں پرائمری کے بعد مزید تعلیم سے محروم رہ جاتی ہے۔اس حوالے سے چارسدہ کے علاقہ غنڈہ کرکنہ کے رہائشی کا کہنا ہے کہ ان کی چار بیٹاں تھی جن پر وہ اعلیٰ تعلیم حاصل کرنا چاہتا تھا لیکن علاقہ میں مڈل یا ہائی سکول نہ ہونے کی وجہ سے پرائمری کے بعد اس نے مجبوراً اپنے بیٹیوں پر یونین کونسل سے باہر جانے والے سکولوں میں جانا بند کر دیا کیونکہ وہ یونین کونسل سے باہر سرکاری سکول کا خرچہ بھی برداشت نہیں کر سکتا تھا ،غفور جان کی خواہش تھی کہ اس کی بیٹیاں تعلیم حاصل کرکے ڈاکٹر یا ٹیچر بننے لیکن سکول نہ ہونے کے باعث انہوں نے بیٹیوں کو مجبوراً مدرسے میں داخل کر دیا ہے۔

اس حوالے سے تعلیم سے محروم بچی نثاء کا کہنا ہے کہ وہ اعلیٰ تعلیم حاصل کرنا چاہتی تھی مگر غربت آڑے آگئی اور سکول نہ ہونے کے باعث اس کی تعلیم ادھوری رہ گئی۔
یونین کونسل غنڈ ہ کرکنہ میں سکول کی عدم موجودگی کے حوالے سے اسسٹنٹ کمشنر طلعت فہد کا کہنا ہے کہ مذکورہ علاقہ میں سکول کے قیام کے لئے وہ پروپوزل تیار کرکے صوبائی حکومت کو بھجوائے گی تاکہ اس علاقہ کی بچیاں بھی تعلیم حاصل کرسکیں اور سکول سے باہر بچوں کی ratioکو کم کیا جاسکے،سکول کے عدم موجودگی کے حوالے سے علاقہ مکینوں کا کہنا ہے کہ ان کی دلی خواہش ہے کہ یہاں پر سکول قائم ہو سکے اور ان کے وہ بچیاں جو تعلیم سے محروم ہے وہ تعلیم حاصل کرسکیں۔سراج علی کی رپورٹ ملاحظہ کریں۔

 

 

 

Check Also

ڈپٹی کمشنر چارسدہ اور ڈی پی او چارسدہ تبدیل ۔

الیکشن کمیشن کی ہدایات کے مطابق خیبر پختونخوا کے چیف سیکرٹری اور انسپکٹر جنرل آف …

Leave a Reply

error: Content is protected !!