Wednesday , 12 December 2018
Home / National News / پڑوسیوں سے دوستانہ تعلقات کیلئے کرتار پور جیسا رویہ پاک افغان راہداری پر بھی دکھا یاجائے ۔

پڑوسیوں سے دوستانہ تعلقات کیلئے کرتار پور جیسا رویہ پاک افغان راہداری پر بھی دکھا یاجائے ۔

اے این پی کے مرکزی صدر اسفندیار ولی خان نے بھارت میں بسنے والے 12کروڑ سکھوں کیلئے کرتار پور کار یڈور کو خوش آئند قرار دیتے ہوئے کہا کہ اس اقدام سے کاروباری برادری کو درپیش مسائل حل ہونے کے ساتھ ٹورازم کو بھی کافی فروغ ملے گا۔اسفندیار ولی خان نے کہا کہ کرتار پور کاریڈور کا کریڈٹ کسی ایک شخص کو دینا زیادتی ہے ۔ سابق وزرائے اعظم شہیدبے نظیر بھٹو اور محمد نواز شریف کے دور میں بھی اس حوالے سے کوششیں ہوتی رہی ۔ انہوں نے کہا کہ اے این پی کے منشور میں معیشت کی بہتری اور امن کیلئے دس راہداریاں قائم کرنے کا پلان واضح طور پر موجود ہے۔اسفندیار ولی خان نے مزید کہا کہ پڑوسیوں سے دوستانہ تعلقات کیلئے کرتار پور جیسا رویہ پاک افغان راہداری پر بھی دکھا یاجائے ۔پاک افغان تعلقات بہتر بنانے کیلئے اعتماد کی فضا ء قائم کی جائے ۔خطہ کے امن کیلئے پاک افغان تعلقات میں تیزی سے بہتری وقت کی ضرورت ہے ۔ پاک افغان سرحد کے دونوں جانب بسنے والے پشتونوں کی روایات ،ثقافت اور اقدار مشترک ہیں۔ تعلقات کے بہتری سے دونوں ملکوں کی تجارت اور معیشت مستحکم ہو گی ۔ اسفندیار ولی خان نے کہا کہ پاکستان کا امن افغانستان کے امن سے مشروط ہے اور مترقی پاکستان کیلئے افغانستان کا مترقی ہونا ضروری ہے۔پاکستان کو تمام ہمسایہ ممالک کے ساتھ بہتر تعلقات استوار کرنا ہونگے ۔

Check Also

شادی شدہ لوگوں کیلئے بری خبر ۔ تفصیلات لنک میں دیکھیں۔

تفصیلات کے مطابق خیبرپختونخوا میں تحریک انصاف حکومت نے گھریلوتشدد کی روک تھام کے لئے …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *